Fri 18 Jm2 1435 - 18 April 2014
10443

شراكت سے اپنا حصہ جو لوگوں كے پاس بطور قرض ہے فروخت كرنے كا حكم كيا ہے؟

قسطوں پر اشياء فروخت كرنے والى كمپنى ميں اپنا حصہ جو لوگوں كے پاس قرض ہے فروخت كرنے كا حكم كيا ہے؟
اور اگر كمپنى ميں كچھ گاڑياں موجود ہوں جو ابھى تك فروخت نہيں كى گئيں تو اپنا حصہ كيسے فروخت كرے ؟

الحمد للہ :

پہلے سوال كا جواب يہ ہے كہ:

يہ غائب رقم كى نقد اور حاضر اور اس سے كم رقم كے ساتھ فروخت ہے، جو كہ جائز نہيں.

اور دوسرے سوال كا جواب يہ ہے كہ:

گاڑيوں ميں سے وہ اپنا حصہ فروخت كردے اور ادھار رقم ميں سے اس كا حصہ باقى رہے گا .

شيخ ابن جبرين حفظہ اللہ
Create Comments