Thu 24 Jm2 1435 - 24 April 2014
106452

حيض سے طہارت ميں شك ہونے كے باوجود روزہ ركھ ليا

ايك عورت كو حيض سے پاك ہونے ميں شك تھا اس نے روزہ ركھ ليا اور جب صبح ہوئى تو وہ يقينى طور پر پاك تھى كيا اس كا يہ روزہ صحيح ہو گا يا نہيں كيونكہ روزہ ركھتے وقت تو اسے پاك ہونے ميں شك تھا ؟

الحمد للہ:

اس كا روزہ صحيح نہيں، بلكہ اسے اس دن كى قضاء ميں روزہ ركھنا ہو گا، اس ليے كہ اصل ميں حيض باقى ہے، اور اس كا حيض سے پاك ہونے ميں شك كے باوجود روزہ ركھنا اور عبادت ميں داخل ہونا صحيح نہيں كيونكہ يہ اس كے صحيح ہونے ميں مانع ہے " انتہى

فضيلۃ الشيخ محمد بن عثيمين رحمہ اللہ..

ديكھيں: مجموع فتاوى ابن عثيمين رحمہ اللہ فتاوى الصيام ( 107 - 108 )
Create Comments