Thu 17 Jm2 1435 - 17 April 2014
12931

كيا عورت كااحرام كسي خاص رنگ اوراس كي سلائي خاص طريقہ كي ہے

بعض عورتوں كا اعتقاد ہے كہ احرام كے ليے خاص لباس ہونا چاہئے كيا يہ اعتقاد صحيح ہے ؟

الحمد للہ :

عورت جس لباس ميں بھي چاہے احرام باندھ سكتي ہے ليكن يہ لباس ساترہونا چاہئے اور لباس شہرت سےاجتناب كرنا چاہيے اور نہ ہي تنگ لباس پہننا چاہئے جس سےجسم كےاعضاء اور شكل واضح ہوتي ہو ، اور اسي طرح خوشبولگانے اور نقاب اور دستانے پہننے سے بھي اجتناب كرے ليكن زيور پہننے ميں كوئي حرج نہيں اور جب چاہے وہ لباس تبديل بھي كر سكتي ہے .

اور بعض ممالك ميں جويہ اعتقاد چل نكلا ہےكہ عورت كواس اس رنگ كےلباس ميں احرام باندھنا چاہئےشريعت ميں اس كي كوئي دليل نہيں ملتي .

عائشہ رضي اللہ تعالي عنہابيان كرتي ہيں كہ : احرام والي عورت جو لباس چاہے زيب تن كرسكتي ہے ليكن صرف وہ لباس پہننا منع ہے جسے ورس اور زعفران لگاياگياہو .

امام بخاري رحمہ اللہ نےاسے تعليقا اور امام بيھقي نے سنن بيھقي ( 5 / 47 ) ميں شعبہ عن يزيد الرشك عن معاذۃ عن عائشۃ كے طريق سے موصولا بيان كيا ہے اور اس كےراوي ثقہ ہيں .

الشيخ سليمان بن ناصر علوان
Create Comments