Fri 25 Jm2 1435 - 25 April 2014
13024

اگر آپ نے قسم نہيں اٹھائى تو آپ پر كفارہ نہيں ہے

ميں نوجوان ہوں اور اللہ تعالى سے عہد كيا ہے ميں روزانہ مختصر تفسير ابن كثير كے كچھ صفحات كا مطالعہ كيا كرونگا، ليكن ميں اس عہد كو پورا نہيں كر سكا، يہ علم ميں رہے كہ ميں نے مدت كى تعيين كى تھى اور يہ مدت ختم ہو چكى ہے، لہذا مجھ پر كيا واجب ہوتا ہے ؟

الحمد للہ :

آپ كو اس ميں كوشش اور جدوجہد كرنى چاہيے، اور اگر كچھ ايام ميں آپ سے كچھ خلل واقع ہو گيا ہے تو اس پر اللہ تعالى كے ہاں توبہ و استغفار كريں، اور اگر آپ نے قسم نہيں اٹھائى تھى تو آپ پر كوئى كفارہ نہيں ہے.

ليكن اگر يہ عہد قسم كے الفاظ كے ساتھ كيا گيا تھا مثلا واللہ، اور تاللہ، اور باللہ، تو آپ كے ذمہ قسم كا كفارہ ہے، كيونكہ سورۃ المآئدۃ ميں اللہ سبحانہ وتعالى كا فرمان ہے:

﴿ اللہ تعالى تمہارى قسموں ميں لغو قسم پر تمہارا مؤاخذہ نہيں كرتا، ليكن اس پر مؤاخذہ فرماتا ہے كہ تم جن قسموں كو مضبوط كردو، اس كا كفارہ دس محتاجوں كو كھانا دينا ہے اوسط درجے كا جو اپنے گھروالوں كو كھلاتے ہو يا ان كو كپڑا دينا، يا ايك غلام يا لونڈى آزاد كرنا، ہے، اور جو كوئى نہ پائے تو وہ تين دن كے روزے ركھے، يہ تمہارى قسموں كا كفارہ ہے جب كہ تم قسم كھا لو، اور اپنى قسموں كا خيال ركھو! اسى طرح اللہ تعالى تمہارے واسطے اپنے احكام بيان فرماتا ہے تا كہ تم شكر كرو ﴾المآئدۃ ( 89 ) .

مجموع فتاوى و مقالات متنوعۃ لفضيلۃ الشيخ علامہ ابن باز رحمہ اللہ تعالى ( 9 / 43 ).
Create Comments