20875: ذبح کرنے سے قبل قربانی کے جانورکا زخمی ہونا


میں نے عید سے کئي دن قبل دنبہ بالکل صحیح وتندرست خریدا ، اورذبح کرنے کے لیے سیڑھیوں سے نیچے اتارتے ہوئے اس کے پاؤں میں ( ذبح سے تقریبا ایک گھنٹہ قبل ) زخم ہوگيا توکیا قربانی میں یہ عیب شمار ہوگا ؟

الحمد للہ
 زاد المستقنع کے مؤلف کا کہنا ہے :

( اگر وہ ( قربانی کا جانور ) عیب دار ہوگئی اوراسے ذبح کردیا تواس کی قربانی ہوجائے گی ۔۔۔۔ ) ۔

شیخ ابن عثیمین رحمہ اللہ تعالی کہتے ہیں اس کی مثال یہ ہے کہ :

ایک شخص نے قربانی کا جانور خریدا اوراس کی تعیین کے بعد پھر اس کی ٹانگ ٹوٹ گئي اوروہ صحیح جانوروں کے ساتھ چلنے سے قاصر ہوگیا ، تواس حالت میں وہ ذبح کرے تویہ قربانی ادا ہوجائے گي ، اس لیے کہ جب اس کی تعیین کردی گئي تووہ اس کےپاس امانت ہوگئي جس طرح کہ کوئي چيزامانت رکھی جاتی ہے ، اورجب وہ امانت ہے اوریہ اس میں عیب بھی اس کے فعل سے پیدا نہیں ہوا یا اس کی زيادتی سے نہيں تواس پر کوئي ضمان نہيں اوریہ قربانی ادا ہوجائے گي ۔.

دیکھیں : الشرح الممتع لابن عثیمین ( 7 / 515 ) ۔
Create Comments