Thu 17 Jm2 1435 - 17 April 2014
21611

كيا عورت كے رحم ميں كيمرہ ٹيوب ڈالنے كے بعد غسل واجب ہوتا ہے

ميں كچھ ماہ سے زير علاج ہوں، اور بانجھ پن كا علاج كروا رہى ہوں اور ماہوارى پر نظر ركھنے اور تصوير كے ليے مسلسل ڈاكٹر كے پاس جارہى ہوں، تصوير كے دوران نرس ميرے رحم ميں ٹيوب ڈالتى ہے تا كہ قريب سے تصوير حاصل كى جا سكے، اور بعض اوقات ميرى شرمگاہ ميں دوائى بھى ڈالى جاتى ہے، تو كيا تصوير كے ليے ٹيوب ڈالے جانے كے بعد غسل واجب ہوتا ہے ؟

الحمد للہ:

مستقل فتوى كميٹى سے مندرجہ ذيل سوال دريافت كيا گيا:

كيا جب عورت يا ڈاكٹرنى كوئى آلہ يا دوائى فرج ميں داخل كرے تو كيا غسل واجب ہو جاتا ہے ؟

كميٹى كا جواب تھا:

جب مذكورہ چيز حاصل ہو تو غسل جنابت واجب نہيں ہوتا، اور نہ ہى روزہ فاسد ہوتا ہے.

ديكھيں: فتاوى اللجنۃ الدائمۃ للبحوث العلميہ والافتاء ( 1 / 50 ).
Create Comments