Thu 24 Jm2 1435 - 24 April 2014
34544

حاملہ عورت كا نقصان اور ضرر كى وجہ سے پردہ اتارنا

ميں نقاب كرتى ہوں، اور حاملہ ہونے كى بنا پر نقاب ميں سانس لينے كى بہت شديد تنگى ہوتى ہے، مجھے مسلمان ليڈى ڈاكٹر نے اس خدشہ كے پيش نظر پردہ اتارنے كى نصيحت كى ہے كہ كہيں ميرى اور بچے كى صحت كو نقصان نہ پہنچ جائے، اس ليے مجھے كيا كرنا چاہيے، اللہ تعالى آپ كو جزائے خير عطا فرمائے ؟

الحمد للہ:

اللہ سبحانہ و تعالى اپنے بندوں كو كوئى بھى ايسا حكم نہيں ديتا جس ميں انہيں كوئى ضرر و نقصان ہو، اور پھر اللہ تعالى كى شريعت پرحكمت ہے، اور اس كے احكام انتہائى آسان اور حكمت والے ہيں، اور اللہ تعالى كسى بھى جان كو اس كى استطاعت و وسعت سے زيادہ مكلف نہيں كرتا، اور جس كسى مسلمان شخص پر بھى شريعت كا كوئى معاملہ شاق ہو تو مشقت آسانى و يسر كو كھينچ لاتى ہے، جيسا كہ شرعى قاعدہ اور اصول بھى يہى ہے.

اس ليے جو شخص كھڑے ہو كر نماز ادا كرنے كى استطاعت نہ ركھتا ہو وہ بيٹھ كر نماز ادا كريگا، اور جو شخص بڑھاپے يا دائمى بيمارى كى بنا پر روزہ نہ ركھ سكتا ہو وہ روزہ چھوڑ كر ايك مسكين كو كھانا كھلائے گا اور اسى طرح دوسرے امور ميں بھى.

اب تك عورتيں پردہ اوڑھتى اور نقاب كرتى چلى آ رہى ہيں، ہم نے تو كسى كى جانب سے بھى كوئى شكايت نہيں ديكھى، ہو سكتا ہے جو ہمارى سائل بہن ـ يا كسى اور كو معاملہ پيش آيا ہو ـ وہ اس كے نقاب يا چادر اوڑھنے كى طريقہ كى بنا پر ہو، يا پھر اس نے جو نقاب يا چادر بنا ركھى ہے اس كى شكل و ہيئت كى بنا پر ہو.

جس كا نقاب بہت زيادہ موٹے كپڑے كا ہو اس كے سانس اور ديكھنے ميں تنگى اور مشكل ممكن ہے، تو اس طرح كے معاملہ كا حل يہ ہے كہ وہ اس كپڑے كى موٹائى ميں كمى كر لے اور اس سے باريك كپڑے كا نقاب بنا لے.

اور بعض عورتيں اپنے چہرے كے گرد نقاب بہت سخت كر كے باندھتى ہيں، جس كى بنا پر سانس لينے ميں دشوارى ہوتى ہے، اس كا حل يہ ہے كہ وہ اس كو تھوڑا ڈھيلا كر كے باندھ لے تا كہ آسانى و راحت كے ساتھ سانس لے سكے.

آپ كے ليے بہتر يہى ہے كہ آپ كسى اور تجربہ كار ليڈى ڈاكٹر جائيں جو اس ڈاكٹر سے زيادہ تجربہ ركھتى ہو، ہو سكتا ہے وہ وسائل و آلات كى بنا پر سانس كى تنگى كا كوئى حل بتا سكيں، اور اگر ہر وسائل اختيار كرنے كے باوجود ـ ان شاء اللہ يہ بہت بعيد ہے ـ يہ ضرر اور نقصان ختم نہ ہو تو پھر اس حالت ميں سارا چہرہ ننگا نہ كيا جائے، بلكہ سانس لينے كے ليے صرف ناك كے كنارے سے ہى نقاب عليحدہ كر ليا جائے تا كہ سانس آسانى و سہولت كے ساتھ ليا جا سكے، اور اگر عام حالات سے اور بھى كم كى ضرورت ہو تو اسے كر ليا جائے.

اللہ تعالى سے ہمارى دعا ہے كہ وہ آپ كو ہر برائى اور بيمارى سے بچا كر ركھے، اور آپ كو نيك و صالح اولاد كى نعمت سے نوازے، آمين.

واللہ اعلم .

الاسلام سوال و جواب
Create Comments