115596: والدہ کا آپریشن کروانا ہے جس میں خطیر رقم صرف ہوگی، تو کیا والدہ کا علاج انشورنس کے ذریعے کروا لے؟


میری والدہ کینڈامیں مجھ سے ملنے اور علاج کیلئے آنا چاہتی ہے، عمومی طور پر انہیں آپریشن کی ضرورت رہتی ہے، جسکا تقریبا 2000 ہزار ڈالر کے لگ بھگ خرچہ ہوتا ہے، میں مالی اعتبار سے ٹھیک ہوں، لیکن میری والدہ کے پاس کوئی رقم نہیں ہے، تو کیا میں تجارتی انشورنس میں انکی رجسٹریشن کروادوں؟ صورتِ حال میں نے آپکو بتلا دی ہے، اور انشورنس سے ایک ہزار ڈالر کے عوض میں آپریشن کے سارے خرچے کمپنی کے ذمہ ہوجائیں گے، چاہے 150000 ڈالر تک ہی کیوں نہ پہنچ جائیں۔

Published Date: 2014-01-01

الحمد للہ:

تمام تعریفیں اللہ کیلئے ہیں

تجارتی انشورنس سود، جوا، اور باطل طریقے سے مال ہڑپ کرنے پر مشتمل ہوتی ہے، اس لئے تجارتی انشورنس جائز نہیں ، چاہے انشورنس صحت کیلئے ہو یا دیگر آپکی ملکیت میں موجود اشیاء کی، اس کی تفصیل سوال نمبر (4210) اور (39474)کے جوابات میں گزر چکی ہے۔

آپ اپنی والدہ کا علاج کروائیں یہ والدہ کے ساتھ حسنِ سلوک ہے، اور اس پر آپکو اجر وثواب بھی ملے گا، اللہ تعالی سے ثواب کی امید رکھو، اور جو مال اللہ تعالی نے تمہیں عطا کیا ہے اس میں سے خرچ کرو، یہ بات ذہن نشین رکھنا کہ جو شخص اللہ کیلئے کسی چیز کو چھوڑتا ہے اللہ تعالی اسے اُس سے بہتر عطا فرماتا ہے، اور جو کسی اچھے کام کیلئے اپنا مال خرچ کرے اللہ تعالی اسے اور زیادہ عنائت کرتا ہے، فرمانِ باری تعالی ہے:

( قُلْ إِنَّ رَبِّي يَبْسُطُ الرِّزْقَ لِمَنْ يَشَاءُ مِنْ عِبَادِهِ وَيَقْدِرُ لَهُ وَمَا أَنْفَقْتُمْ مِنْ شَيْءٍ فَهُوَ يُخْلِفُهُ وَهُوَ خَيْرُ الرَّازِقِينَ )

ترجمہ: آپ ان سے کہئے کہ:''میرا پروردگار اپنے بندوں میں جس کے لئے چاہے رزق فراخ کردیتا ہے اور جس کےلئے چاہے کم کردیتا ہے اور جو کچھ تم خرچ کرتے ہو تو وہی اس کی جگہ تمہیں اور دے دیتا ہے اور وہی سب سے بہتر رازق ہے'' سبأ/39

بخاری (1442) اورمسلم (1010) نے ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت کیا ہے کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: (جس دن بھی بندے صبح کرتے ہیں ، اس دن دو فرشتے نازل ہوتے ہیں، اور ان میں سے ایک فرشتہ کہتا ہے: یا اللہ ! تیری راہ میں خرچ کرنے والی کی نسلوں کو بھی عنایت فرما، اور دوسرا فرشتہ کہتا ہے: یا اللہ! تیری راہ میں خرچ نہ کرتے والے کو تلف کردے)

اللہ تعالی ہمیں اور آپکو ان کاموں کی توفیق دے جو اسے پسند ہیں۔

واللہ اعلم .

اسلام سوال وجواب
Create Comments