Fri 25 Jm2 1435 - 25 April 2014
37665

روزے کے لیے جبڑے کو سیدھا رکھنے کےلیے لگایا گیا کلمپ منہ سے نکالنا ضروری نہیں

کیا جبڑے کوسیدھا رکھنے والا کلمپ روزے کے لیے اتارنا ضروری ہے ، کیونکہ جب میں بات چيت کرتاہوں تووہ میرے منہ میں بہت زيادہ لعاب پیدا کرتا ہے جسے مجبورا نگلنا پڑتا ہے ، اللہ تعالی آپ کو جزائے خیر عطا فرمائے ؟

الحمدللہ

روزے کے لیے جبڑے کوسیدھا رکھنے والاکلمپ وغیرہ اتارنا ضروری نہيں ہے ، کیونکہ اس سے معدہ میں کوئي چيز نہيں جاتی ، اوریہ کہ اس سے لعاب زيادہ بنتا ہے اس کی وجہ سے روزہ نہيں ٹوٹتا ۔

علماء کرام نے صراحتا بیان کیا ہے کہ روزے دارکا منہ میں درھم رکھنا جائز ہے ، لھذا جبڑے کو سیدھا کرنے والا کلمپ توبالاولی جائز ہوا کیونکہ یہ تو انسان اپنی ضرورت کے لیے رکھتا ہے ۔

امام احمد رحمہ اللہ تعالی کہتےہيں :

جس نے اپنے منہ میں روزے کی حالت میں درھم یا دینار رکھا اوروہ اپنے حلق میں اس کا ذائقہ محسوس نہ کرے تو اس کا روزہ صحیح ہے اس میں کوئي حرج نہيں ، لیکن جب اس کا ذائقہ پائے تو پھر مجھے اچھا نہيں لگتا کہ وہ منہ میں رکھے ۔ ا ھـ دیکھیں المغنی لابن قدامہ ( 4 / 359 ) ۔

پھریہ بھی ہے کہ تھوک نگلنے سے روزے کو کوئي نقصان نہيں چاہےوہ زيادہ ہی کیوں نہ ہو ۔

واللہ اعلم .

الاسلام سوال وجواب
Create Comments