منگل 17 جمادی اولی 1440 - 22 جنوری 2019
اردو

دس فيصد سےزيادہ منافع لينا

10031

تاریخ اشاعت : 22-01-2006

مشاہدات : 3952

سوال

كيا تاجركو مال پر دس فيصد سےزيادہ منافع لينا جائزہے ؟

جواب کا متن

الحمد للہ :

شرعي طور پر تاجر كےليے تجارت ميں نفع كي نسبت اورمقدار مقرر نہيں ليكن مسلمان كےليے يہ جائز نہيں كہ وہ خريدار كو دھوكہ دے، اور وہ اسے اس ريٹ پر سواد فروخت كرے جوماركيٹ ميں معروف نہيں ، بلكہ مسلمان كے ليے مشروع ہےكہ وہ نفع ميں مہنگائي نہ كرے، بلكہ اسے خريدوفروخت كرتے وقت نرم اور آسان رويہ اختيار كرنا چاہيے، اس ليے كہ نبي كريم صلي اللہ عليہ وسلم نے لين دين ميں نرمي برتنےپر ابھارا ہے.

ماخذ: ديكھيں: فتاوي اللجنۃ الدائمۃ للبحوث العلميۃ والافتاء ( 13 / 92 )

تاثرات بھیجیں