بدھ 4 ربیع الثانی 1440 - 12 دسمبر 2018
اردو

اللہ كے ذكر سے كيا مراد ہے ؟

105407

تاریخ اشاعت : 25-05-2009

مشاہدات : 4638

سوال

اللہ كے ذكر سے كيا مراد ہے، آيا ذكر كى مجالس قائم كرنا اور ڈھول بجانا اور تالياں اور سيٹياں بجانا ذكر ہے يا كہ سرى اور جھرى اللہ كا ذكر كرنا اور قرآن مجيد خاموشى سے پڑھنا ذكر كہلاتا ہے ؟

جواب کا متن

الحمد للہ:

اللہ سبحانہ و تعالى كا ذكر عام ہے جو اللہ كے احكام پر عمل كرنا اور اللہ كے منع كردہ امور سے اجتناب اور تسبيح و تحميد يعنى سرى اور جہرى طور پر سبحان اللہ الحمد اللہ اور قرآن مجيد كى تلاوت كرنا، اور اس كے علاوہ اللہ تعالى نے جو افعال اور اقوال مشروع كيے ہيں يہ سب ذكر ميں شامل ہيں.

اللہ كے ذكر ميں ڈھول تماشہ اور تالياں اور سيٹياں بجانا اور اجتماعى ذكر كرنا شامل نہيں، بلكہ يہ بدعت ہے اور ايسا كرنا جائز نہيں.

اللہ تعالى ہى توفيق دينے والا ہے، اللہ تعالى ہمارے نبى محمد صلى اللہ عليہ وسلم اور ان كى آل اور صحابہ كرام پر اپنى رحمتيں نازل فرمائے" انتہى

اللجنۃ الدائمۃ للبحوث العلميۃ والافتاء

الشيخ عبد العزيز بن عبد اللہ بن باز

الشيخ عبد الرزاق عفيفى

الشيخ عبد اللہ بن غديان

الشيخ عبد اللہ بن قعود

واللہ اعلم .

ماخذ: الاسلام سوال و جواب

تاثرات بھیجیں