جمعرات 7 ربیع الاول 1440 - 15 نومبر 2018
اردو

ايڈز كے مريض سے شادى كرنے كا حكم

11137

تاریخ اشاعت : 17-04-2010

مشاہدات : 4694

سوال

كيا ايڈز كے مريض سے شادى كرنا جائز ہے ؟

جواب کا متن

الحمد للہ:

وہ اس وقت تك شادى نہ كرے جب تك اپنى مرض كو بيان نہ كر دے، اسے واضح كرنا چاہيے كہ مجھے فلان بيمارى ہے اور اگر وہ اس پر موافق ہوں تو ٹھيك وگرنہ شادى نہ كرے، كيونكہ جب وہ سسرال والوں پر اپنے مرض كو مخفى ركھے گا تو وہ انہيں دھوكہ دے رہا ہے.

ہو سكتا ہے اس عورت سے خاوند كو يا پھر مرد سے عورت كو اور پھر ان كى اولاد ميں بھى وہ بيمارى منتقل ہو جائے اس ليے پہلے وضاحت كرنا ضرورى ہے، ليكن اگر وہ عورت آپ پر راضى ہو جاتى ہے اور اللہ كى تقدير پر راضى ہوتے ہوئے شادى كرتى ہے تو اس ميں كوئى حرج نہيں.

واللہ اعلم .

ماخذ: الشیخ محمد صالح المنجد

تاثرات بھیجیں