جمعرات 19 جمادی اولی 1440 - 24 جنوری 2019
اردو

عقد نکاح کے بعد خاوند کے لیے بیوی سےکیا کچھ حلال ہے

13886

تاریخ اشاعت : 16-03-2004

مشاہدات : 6640

سوال

جب خاوند اوربیوی کا شرعی عدالت میں نکاح ہوجائے اوررخصتی کی تقریب منعقد نہ ہوئي ہو تو سب کو علم ہے کہ وہ رسمی طور پر خاوند اوربیوی ہيں ، توکیا اللہ تعالی کےہاں بھی وہ خاوند اوربیوی شمار ہونگے ؟

جواب کا متن

الحمدللہ

جب شروط شرعیہ کی موجودگی میں نکاح کیا جائے تو وہ اللہ تعالی کی شریعت میں خاوند اوربیوی شمار ہوں گے ، عقد نکاح کے بعد ان کا آپس میں بات چيت کرنا اٹھنا بیٹھنا ، اور ہر قسم کی آزادی کے ساتھ آپس میں خلوت کرنا بھی جائز ہوگا ۔

مستقل فتوی کمیٹی ( اللجنۃ الدائمۃ للافتاء ) سے سوال کیا گيا کہ :

عقد نکاح کے بعد اوررخصتی سے قبل خاوند اوربیوی کے لیے کیا کچھ کرنا حلال ہے ؟

توکمیٹی کا جواب تھا :

اس کے لیے وہی کچھ جائز ہے جواس خاوند اوربیوی کے لیے جائز ہے جنہوں نے دخول کرلیا ہے ، وہ اسے دیکھ بھی سکتا ہے اوربوس وکنار بھی کرسکتا ہے اسی طرح اس کےساتھ سفر اورجماع بھی کرسکتا ہے ۔۔۔ الخ

دیکھیں فتاوی الجامعۃ للمراۃ المسلمۃ ( 2 / 540 ) ۔

واللہ اعلم .

ماخذ: الشیخ محمد صالح المنجد

تاثرات بھیجیں