ہفتہ 17 رجب 1440 - 23 مارچ 2019
اردو

كيا قبر پر اگنے والا درخت ميت كے صالح ہونے كى دليل ہے

20001

تاریخ اشاعت : 18-04-2008

مشاہدات : 4575

سوال

ميں نے ملاحظہ كيا ہے كہ كچھ لوگ جب كسى بھى قبر پر كوئى درخت اگا ہوا ديكھتے ہيں تو قبر والے كى صفات بيان كرنا شروع ہو جاتے ہيں كہ وہ ايسا ايسا تھا، كيا قبروں پر درخت اگنے كا اس كے ساتھ كوئى تعلق ہے ؟

جواب کا متن

الحمد للہ:

اس كى كوئى دليل نہيں، اور نہ ہى قبروں پر درخت اور گھاس اگنا قبر والے كے صالح اور نيك ہونے كى دليل ہے، بلكہ يہ خيال اور ظن باطل ہے، درخت تو ہر نيك اور فاجر كى قبر پر اگتے ہيں، يہ كوئى نيك اور صالح لوگوں كے ساتھ خاص نہيں.

اس ليے عقيدہ ميں انحراف ركھنے اور باطل عقيدہ كے مالك لوگوں كى باتوں ميں آكر دھوكہ نہيں كھانا چاہيے.

اللہ تعالى ہى ممد و معاون ہے.

ماخذ: ديكھيں: كتاب مجموع فتاوى و مقالات متنوعۃ فضيلۃ الشيخ علامہ عبد العزيز بن عبد اللہ بن باز رحمہ اللہ ( 4 / 380 )

تاثرات بھیجیں