جمعہ 13 جمادی اولی 1440 - 18 جنوری 2019
اردو

ايك عيسائى كے گھر ميں تھا كہ نماز كا وقت ہو گيا

2188

تاریخ اشاعت : 03-05-2006

مشاہدات : 4732

سوال

بعض اوقات ميں كسى عيسائى كے گھر ميں ہوتا ہوں تو نماز كا وقت ہو جاتا ہے، اور ميں اپنى جائے نماز لے كر ان كے سامنے نماز ادا كرنا شروع كر ديتا ہوں، تو كيا ميرى نماز صحيح ہے، كيونكہ نماز عيسائى كے گھر ميں ادا كى گئى ہے ؟

جواب کا متن

الحمد للہ :

جى ہاں آپ كى نماز صحيح ہے، اللہ تعالى آپ كو اپنى اطاعت كرنے كى حرص اور بھى زيادہ فرمائے، اور خاص كر نماز پنچگانہ كو صحيح اوقات ميں ادا كرنے كى توفيق نصيب فرمائے، واجب يہ ہے كہ آپ نماز باجماعت ادا كرنے كى كوشش كريں، اور حسب استطاعت مساجد ميں نماز ادا كر كے مساجد كو آباد كريں.

ماخذ: ماخوذ از: فتاوى اللجنۃ الدائمۃ للبحوث العلميۃ والافتاء ( 6 / 270 )

تاثرات بھیجیں