سوموار 15 رمضان 1440 - 20 مئی 2019
اردو

مسلمان شخص كى حاملہ عيسائى بيوى كہاں دفن كى جائے گى

22156

تاریخ اشاعت : 09-11-2005

مشاہدات : 2671

سوال

مسلمان شخص سے حاملہ نصرانى عورت كہاں دفن كى جائے گى ؟

جواب کا متن

الحمد للہ :

شيخ الاسلام ابن تيميۃ رحمہ اللہ تعالى سے مندرجہ ذيل سوال كيا گيا:

ايك مسلمان شخص كى عيسائى بيوى فوت ہوگئى جس كے پيٹ ميں سات ماہ كا بچہ ہے، تو كيا اسے مسلمانوں كے قبرستان ميں دفن كيا جائےگا، يا عيسائيوں كے قبرستان ميں؟

ان كا جواب تھا:

وہ مسلمانوں كے قبرستان ميں دفن نہيں كى جائےگى، اور نہ ہى عيسائيوں كے قبرستان ميں، كيونكہ مسلمان اور كافر جمع ہيں، لھذا نہ تو كافر مسلمانوں كے ساتھ اور نہ ہى مسلمان كافروں كے ساتھ دفن ہوگا، بلكہ اسے عليحدہ دفن كيا جائےگا، اور اس كى پشت قبلہ كى طرف كى جائےگى، كيونكہ بچے كا منہ اس كى پشت كى طرف ہے، اور جب اسےاس طرح دفن كيا جائےگا تو بچے كا منہ قبلہ رخ ہوگا، اور بالاتفاق علماء كرام بچہ اپنے والد كے اسلام كى بنا پر مسلمان ہوگا، اگرچہ اس كى ماں كافرہ ہى ہے.

واللہ اعلم .

ماخذ: الاسلام سوال وجواب

تاثرات بھیجیں