جمعہ 21 شعبان 1440 - 26 اپریل 2019
اردو

شہر ميں ايك سے زيادہ نماز عيد كا اجمتاع

سوال

نماز عيدين كے ليے اسلامى تنظيم ايك بہت بڑا ہال بك كرواتى ہے، تو كيا تقريبا تيس ميل دور رہنے والى جماعت كے لوگ اپنى مسجد ميں نماز عيد كروا سكتے ہيں؟
يہ علم ميں رہے كہ آنے جانے كے ليے ٹرانسپورٹ ميسر ہے، اور كيا اس ہال ميں سب مسلمان اكٹھے ہو كر نماز عيد ادا كريں تو كئى ايك مقامات پر نماز ادا كرنے سے بہتر اور افضل نہيں ؟

جواب کا متن

الحمد للہ:

اگر آپ سب لوگوں كا جمع ہونا ممكن ہو تو يہ افضل اور بہتر ہے، ليكن اگر ايسا كرنے ميں ان پر مشقت ہو تو پھر اپنے علاقے اور شہر ميں جو اس ہال سے تيس ميل دور واقع ہے وہيں نماز ادا كرنے ميں كوئى مانع نہيں، جو مشقت كا باعث بنے.

اللہ تعالى ہى توفيق دينے والا ہے.

ماخذ: فتاوى اللجنۃ الدائمۃ للبحوث العلميۃ والافتاء ( 8 / 292 )

تاثرات بھیجیں