ہفتہ 20 رمضان 1440 - 25 مئی 2019
اردو

امانت میں تصرف اوراس سےفائدہ حاصل کرنے کا حکم

4849

تاریخ اشاعت : 24-12-2003

مشاہدات : 3590

سوال

میرے پاس ایک شخص نے کچھ رقم امانت رکھی تومیں نے اس مبلغ سے فائدہ حاصل کیا اورکاروبار کیا ، جب وہ شخص آیا تومیں نے اسے سارا مال واپس کردیا لیکن اس کے مال سے فائدہ لینے کے بارہ میں کچھ بھی نہ بتایا، تو کیا میرا ایسا کرنا جائز ہے کہ نہيں ؟

جواب کا متن

الحمد للہ
جب کوئي شخص آپ کے پاس امانت رکھے تواس میں آپ بغیراجازت تصرف نہيں کرسکتے ۔۔ آپ پراس کی حفاظت اس طرح کرنا ضروری ہے جس طرح اس جیسی اشیاء کی حفاظت کی جاتی ہے ۔

اوراگرآپ نے اس کی اجازت کے بغیر اس میں کوئي تصرف کیا توآپ اس سے معافی مانگیں اگر معاف کردے توٹھیک وگرنہ اسے اس کا مال منافع سمیت واپس کرنا ہوگا ، یا پھر آپ اس نے نصف یا کسی اورحصہ پرمصالحت کرلیں ، اس لیے کہ مسلمانوں کے مابین صلح کرنا جائز ہے لیکن ایسی صلح نہيں ہونی چاہیے جس سے کوئي حلال چیز حرام ہویاپھر حرام چيز حلال کرلی جائے ۔

واللہ اعلم .

ماخذ: الشیخ ابن باز رحمہ اللہ تعالی ۔ : دیکھیں : فتاوی اسلامیۃ ( 3 / 7 ) ۔

تاثرات بھیجیں