ہفتہ 17 رجب 1440 - 23 مارچ 2019
اردو

اسلام قبول کرنے سے پہلے گودائ کا نشان ہے جسے اب ختم کرنا تکلیف دہ ہے

سوال

میں جب کافرہ تھی اس وقت سے میرے کندھے پرگودنے کا نشان باقی ہے الحمدللہ اب میں مسلمان ہوں اورمیراخاوند اس کی مخالفت نہیں کرتا لیکن اس کے باوجود میں یہ نشان ختم کرنا چاہتی ہوں ، مجھے بتایا گيا ہےکہ اسے لیزر کے ساتھ ختم کیا جاۓ گا جوکہ زيادہ تکلیف دہ ہے کیونکہ جلدجلائ جاۓ گی میں چاہتی ہوں کہ بغیر حساب کے جنت والوں میں شامل ہوجاؤں ، ان شاءاللہ
میں اب توبہ کرچکی ہوں تومجھے اب کیا کرنا چاہيے ؟
اللہ تعالی آپ کوجزاۓ خیر عطا فرماۓ ۔

جواب کا متن

الحمد للہ
اس اللہ تعالی کا شکراورتعریف ہے جس نے آپ کوصراط مستقیم پرچلایا اوراس کی راہنمائ فرمائ ہم اللہ تعالی سے آپ کی ثابت قدمی کی دعا کرتے ہیں

اس نشان کے بارہ میں ہم یہ کہیں کہ اگراسے آپریشن کے بغیر ختم نہیں کیا جاسکتا توآپ پرکوئ ضروری اور لازم نہيں کہ اسے ختم کروائيں اس لیے کہ اس میں تکلیف اورمشقت ہے اوراذیت کا باعث ہے ، اوراللہ تعالی تویہ فرماتا ہے کہ :

اللہ تعالی نے تم پردین میں کوئ سختی نہیں رکھی

اس فعل پرآپ کی ندامت اورکراہیت اوردوبارہ ایسے فعل کونہ کرنا ہی کافی ہے ، اوردوسری بات یہ ہے کہ اسلام پہلے سب گناہوں کو ختم کرڈالتا ہے تواس طرح اس نشان کا باقی رہنا آپ کےلیے ان شاء اللہ کوئ‏ نقصان دہ نہيں ۔

اللہ تعالی آپ کواپنی رضا مندی اورمحبت والے کام کرنے کی توفیق عطا فرماۓ آمین ۔

واللہ اعلم .

ماخذ: الشیخ محمد صالح المنجد

تاثرات بھیجیں