بدھ 14 صفر 1440 - 24 اکتوبر 2018
اردو

كافروں كو شراب فروخت كرنى

6682

تاریخ اشاعت : 08-04-2007

مشاہدات : 4666

سوال

اگر مسلمانوں كو شراب اور خنزير فروخت نہ كرے تو كيا كافروں كو يہ دونوں اشياء فروخت كرنا جائز ہے ؟

جواب کا متن

الحمد للہ:

كھانے پينے اور دوسرى وہ اشياء جو اللہ تعالى نے حرام كى ہيں مثلا شراب اور خنزير وغيرہ كى تجارت جائز نہيں، چاہے يہ تجارت كفار كے ساتھ ہى ہو، كيونكہ نبى كريم صلى اللہ عليہ وسلم سے ثابت ہے كہ آپ نے فرمايا:

" بلا شبہ جب اللہ تعالى نے كسى چيز كو حرام كيا ہے تو اس كى قيمت بھى حرام كر دى ہے "

اور اس ليے بھى كہ رسول كريم صلى اللہ عليہ وسلم نے شراب نوشى كرنے والے، اور شراب فروخت كرنے والے، اور شراب خريدنے اور فروخت كرنے والے، اور اسے اٹھا كر لے جانے والے، اور جس كى طرف اٹھا كر لے جائى جا رہى ہے، اور اس كى قيمت كھانے والے، اور اسے كشيد كرنے والے اور كشيد كروانے پر سب پر لعنت فرمائى ہے "

واللہ تعالى اعلم.

ماخذ: ماخوذ از: فتاوى اللجنۃ الدائمۃ للبحوث العلميۃ والافتاء ( 13 / 47 )

تاثرات بھیجیں