بدھ 15 ذو القعدہ 1440 - 17 جولائی 2019
اردو

ليٹ آنے والے مرد عورتوں كے پيچھے نماز باجماعت ادا كرتے ہيں

9486

تاریخ اشاعت : 24-11-2006

مشاہدات : 4261

سوال

كالج ميں ہميں نماز ادا كرنے كے ليے ايك چھوٹا سا كمرہ ديا گيا جس ميں مسلمان لڑكے اور لڑكياں ايك ہى وقت ميں نماز ادا كرتے ہيں ( ميں جماعت كى بات نہيں كر رہا ) پھر كچھ اور لڑكے آ كر لڑكيوں كے پيچھے نماز كے ليے كھڑے ہو جاتے ہيں، تو كيا ايسا كرنا جائز ہے ؟

جواب کا متن

الحمد للہ:

عورتوں كو مردوں سے عليحدہ ركھنے كى كوشش كرنى چاہيے، اگرچہ نماز كے ليے مخصوص جگہ چھوٹى ہى كيوں نہ ہو، چنانچہ سب مرد و عورت كو يہ علم ہونا چاہيے كہ مسجد كا آخرى اور پچھلا حصہ عورتوں كے ليے مخصوص ہے، اور اس ميں عورتوں كے ليے كوئى آڑ لگا كر تحديد كرنى ممكن ہے چاہے زمين پر لائن ہى لگا دى جائے، كہ مردوں اور عورتوں كے مابين كافى خلاء ہو، تو اس طرح بعد ميں آنے والے مرد اپنے بھائيوں كے پيچھے اور عورتوں كے آگے نماز ادا كريں.

واللہ اعلم .

ماخذ: الشیخ سعد الحمید

تاثرات بھیجیں