ہفتہ 7 ربیع الثانی 1440 - 15 دسمبر 2018
اردو

روزہ كى حالت ميں بيوى سے جماع كے بغير مباشرت

95383

تاریخ اشاعت : 30-09-2007

مشاہدات : 6636

سوال

روزے كى حالت ميں رمضان كو دن كے وقت بے لباس ہو كر بيوى كے ساتھ سونے اور اعضاء تناسليہ كا ايك دوسرے كو لگنے كا حكم كيا ہے، ليكن دخول نہيں ہوا ؟

جواب کا متن

الحمد للہ:

اگر دخول نہ ہوا ہو، اور نہ ہى منى خارج ہوئى ہو تو آپ كا روزہ صحيح ہے، اور آپ پر كچھ نہيں.

اور عضو تناسل سے مذى كے خروج سے روزہ باطل نہيں ہوتا، علماء كرام كے اقوال ميں سے صحيح قول يہى ہے، جو كہ امام ابو حنيفہ، امام شافعى، رحمہااللہ كا مسلك ہے.

مزيد تفصيل كے ليے آپ سوال نمبر ( 37715 ) كے جواب كا مطالعہ ضرور كريں.

روزہ دار كے ليے روزے كى حالت ميں بيوى سے بوس و كنار كرنا اور اسے اپنے ساتھ لگانا ( يعنى ايك دوسرے كى جلد كا ملنا ) جائز ہے، ليكن اس ميں شرط يہ ہے كہ اگر اسے اپنے اوپر كنٹرول ہو كہ وہ اس طرح جماع نہيں كر بيٹھےگا، اور نہ ہى منى خارج ہو گى.

مزيد تفصيل كے ليے آپ سوال نمبر ( 49614 ) كے جواب كا مطالعہ كريں.

واللہ اعلم .

ماخذ: الاسلام سوال و جواب

تاثرات بھیجیں