ہفتہ 2 جمادی ثانیہ 1442 - 16 جنوری 2021
اردو

بڑى بيٹى كى شادى ہونے تك چھوٹى كى شادى نہ كرنا

97918

تاریخ اشاعت : 11-09-2015

مشاہدات : 1675

سوال

كيا باپ پر واجب ہے كہ بڑى بيٹى كى شادى ہونے تك چھوٹى بيٹى كى شادى نہ ہونے دے ؟

جواب کا متن

الحمد للہ.

اگر چھوٹى بيٹى كا رشتہ آئے تو باپ كے ليے جائز نہيں كہ وہ اس وجہ سے اس كى شادى نہ كرے اور رشتہ رد كر دے كہ جب تك بڑى بيٹى كى شادى نہيں ہوتى وہ اس كى شادى نہيں كريگا.

يہ ان رسم و رواج اور عادات ميں شامل ہے جس كى شريعت اسلاميہ ميں كوئى دليل نہيں پائى جاتى، لوگوں كا خيال ہے كہ ايسا كرنے سے بڑى بيٹى كے ليے نقصاندہ ہے، اگر يہ بات صحيح ہو تو پھر ايسا كرنے سے تو چھوٹى بيٹى كو نقصان ہوتا ہے.

اور پھر نقصان اور ضرر نقصان و ضرر سے دور اور زائل نہيں ہوتا ".

ماخذ: الاسلام سوال و جواب