منگل 6 شوال 1442 - 18 مئی 2021
اردو

امتحانات ميں نقل كر كے سند كردہ حاصل سے تنخواہ لينے كا حكم

تاریخ اشاعت : 25-01-2011

مشاہدات : 5571

سوال

ايك شخص علمى سند كى بنا پر ملازمت كر رہا ہے، اس نے امتحانات ميں نقل كر كے سند حاصل كى تھى، اور اس وقت وہ اپنے كام ميں ماہر ہے اس كى تنخواہ كا حكم كيا ہے حلال ہو گى يا حرام ؟

جواب کا متن

الحمد للہ.

ان شاء اللہ اس ميں كوئى حرج نہيں، اس نے امتحانات ميں جو نقل كى تھى اس پر توبہ كرنى چاہيے، اور اگر وہ ملازمت ميں اپنى ڈيوٹى اسى طرح كر رہا ہے جس طرح حق ہے اور مہارت سے كام كرتا ہے تو اس كى كمائى ميں كوئى حرج نہيں؛ ليكن اس نے دھوكہ و فراڈ اور نقل كرنے كى غلطى كى ہے، اسے اس كام سے اللہ تعالى كے ہاں توبہ كرنى چاہيے " انتہى.

ماخذ: ديكھيں: مجموع فتاوى ابن باز ( 19 / 31 )