ہفتہ 9 ربیع الاول 1440 - 17 نومبر 2018
اردو

مسلمان اپنی اوردوسروں کی نظروں میں

تاریخ اشاعت : 18-11-2015

مشاہدات : 1701

سوال

مسلمانوں کی طرف کس نظرسے دیکھا جاۓ ؟
اورمسلمان خود اپنے آپ کو کس نظر سے دیکھتا ہے ؟

جواب کا متن

الحمد للہ:

مسلمان وہ ہیں جنہوں نے اپنے آپ کواللہ تعالی کے سپرد کر دیا اوراس کی شریعت کو قائم اوراپنے رب سبحانہ وتعالی کی کتاب اور اپنے نبی صلی اللہ علیہ وسلم کی سنت پرعمل کیا ہے ، اورانہوں نے وہی کام کیے ہیں جن کا انہیں اللہ تعالی اوراس کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم حکم دیا اورانہوں نے محرمات کوترک کردیا ۔

توجب یہ کچھ پایا جاۓ توپھر ان کے دشمن ان کی طرف ہیبت ووحشت اوراکبار اعزاز کی نظر سے دیکھتے ہیں ، اس کا سبب یہ ہے کہ وہ اس کوجانتے ہیں کہ مسلمانوں کا دین اسلام پرتمسک اورالتزام انہیں اللہ تعالی کے ہاں رفعت وبلندی عطا کرتا اور بندوں اورملکوں پران کی حکومت قا‏ئم کرتا ہے ۔

تواس اعتبار سے اعداء اسلام ان کی طرف ہیبت اور احترام اوران سے خوف کی نظر سے دیکھتے ہیں ۔

لیکن جب ان میں دینی کمزوری آجاۓ اور اس کا تمسک کمزور پڑ جاۓ اوران میں بدعات اورنۓ نۓ کام پیدا ہو جائيں تودشمنان دین انہیں حقارت و ذلت اورکمینگی کی نظرسے دیکھنا شروع کردیتے ہیں ، دشمنان دین کے دلوں سے مسلمانوں کی ہیبت وخوف جاتا رہتا ہے ۔

اورمسلمان اپنی نظرمیں اس طرح ایک دوسرے کودیکھیں کہ وہ ایک دوسرے کے حالات سے واقفیت اوران کے درمیان واقع ہونے والے خلل وضعف کودیکھتے ہوۓحتی الوسعہ اس کا علاج کریں تا کہ ان کی کھوئ ہوئ‏ عزت واپس آسکے ۔

تاکہ ان کا دشمن اگران کے حالات جاننے کی کوشش کرے توان سے خوفزدہ ہو، اورمسلمانوں کوچاہیۓ کہ وہ اپنی اصلاح کریں اس لیے کہ اللہ تعالی انہیں قوت دینے والااوران کی مدد ونصرت کرنے والا ہے ۔.

ماخذ: الشیخ عبداللہ بن جبرین ۔

تاثرات بھیجیں