جمعرات 15 رجب 1440 - 21 مارچ 2019
اردو

مسجد كى اشياء فروخت كرنے كا حكم

11247

تاریخ اشاعت : 20-08-2005

مشاہدات : 3719

سوال

كيا مساجد كے پرانے قالين، اور ائركنڈيشن فروخت كرنے جائز ہيں، تا كہ نئى اشياء كى قيمت مكمل كى جاسكے ؟

جواب کا متن

الحمد للہ :

مندرجہ بالا سوال ہم نے فضيلۃ الشيخ عبد الرحمن بن جبرين حفظہ اللہ تعالى كے سامنے پيش كيا تو ان كا جواب تھا:

يہ جائز ہے، جب ناكارہ ہو جائيں، يا خراب ہو جائيں اور مرمت كے محتاج ہوں، تو اگر ان كى مرمت كى جاسكتى ہو اور يہ چل سكتے ہوں تو ٹھيك وگرنہ انہيں فروخت كركے قيمت اسى طرح كى اشياء يا اس سے كم ميں صرف كى جاسكتى ہے.

جيسا كہ اگر پرانے ائركنڈيشن دس ہيں اور ان كى قيمت سے صرف پانچ خريدے جا سكتے ہيں تو ايسا كيا جا سكتا ہے .

ماخذ: فضيلۃ الشيخ عبد الرحمن بن جبرين

تاثرات بھیجیں