ہفتہ 18 ذو القعدہ 1440 - 20 جولائی 2019
اردو

ہديہ دينےوالے كا ہديہ لينے والے سےخريداري كرنا

11585

تاریخ اشاعت : 17-04-2005

مشاہدات : 3094

سوال

ايك شخص نے اپنےبھائي كو بطورہديہ گاڑي دي اب وہ گاڑي فروخت كرنا چاہتا ہے تو كيا جس نے گاڑي ہديہ كي ہے وہ خريد سكتا ہے يا اس كےليے وہ گاڑي خريدني حلال نہيں ؟

جواب کا متن

الحمد للہ :

ہديہ كرنے والے شخص كےليے اپنے بھائي سے وہ چيز خريدني جائز نہيں جو اس نے ہديہ كي ہے اس كي دليل مندرجہ ذيل حديث ہے :

عمر رضي اللہ تعالي عنہ بيان كرتےہيں كہ ميں نے ايك گھوڑا اللہ تعالي كےراستے ميں جھاد كےليے ديا تو اس كےمالك نے اس كا خيال نہ كيا اور ديكھ بھال نہ كي ميں نے سمجھا كہ وہ اسے اونے پونے داموں ميں فروخت كردےگا لھذا ميں نے رسول كريم صلي اللہ عليہ وسلم سے اس كےمتعلق سوال كيا تو رسول كريم صلي اللہ نے فرمايا:

چاہے وہ تمہيں ايك درھم كا بھي دے تم اسے نہ خريدو اس ليے كہ ہديہ دے كرواپس لينے والا شخص اس كتے كي مانند ہے جو قئ كر كے چاٹ لے . صحيح بخاري حديث نمبر ( 2623 ) صحيح مسلم حديث نمبر ( 1620 )

اللہ تعالي ہي توفيق بخشنے والا ہے .

ماخذ: ديكھيں : فتاوي اللجنۃ الدائمۃ ( 16 / 184 )

تاثرات بھیجیں