بدھ 23 شوال 1440 - 26 جون 2019
اردو

مذبح خانہ ميں كچھ ملازمين بے نماز ہيں

1553

تاریخ اشاعت : 28-02-2006

مشاہدات : 4606

سوال

مذبح خانہ ميں كچھ لوگ ملازم ہيں جن ميں نمازى بھى اور بے نماز بھى ہيں، اور وہاں موجود ملازمين ميں سے اكثر دين اسلامى كو برا كہتے ہيں، تو كيا ان كا ذبح كيا ہوا گوشت كھانا جائز ہے ؟

جواب کا متن

الحمد للہ :

دين اسلام كو برا كہنے والوں كو اس مذبخ خانہ ميں رہنے دينا جائز نہيں اگرچہ وہ نماز بھى ادا كرتے ہوں، كيونكہ دين اسلام كو برا كہنا كفر اور دين اسلام سے خارج كر ديتا ہے، اور جو شخص انكارا نماز نہيں پڑھتا، يا نماز ترك كرنے پر مصر ہے، يا پھر وہ اپنے گھروں ميں بھى نماز ادا نہيں كرتا تو اسے بھى وہاں نہيں رہنے دينا چاہيے، اور ان كا ذبح كيا ہوا گوشت كھانا جائز نہيں، چاہے وہ اپنے آپ كو مسلمان ہى كيوں نہ كہتے ہوں، اور اس پر بسم اللہ بھى پڑھتے ہوں.

اگر تو وہ ملك اسلامى ہے، اور وہاں اسلامى قوانين نافذ ہيں تو آپ كو اس مسئلہ ميں خاموشى اختيار نہيں كرنى چاہيے، اور اگر آپ انہيں وہاں سے نكلوا نہيں سكتے تو پھر مسلمانوں كو ان كا ذبح كيا ہوا گوشت كھانے سے بچنے كا كہيں .

ماخذ: ديكھيں: اللؤلؤ المكين من فتاوى فضيلۃ الشيخ ابن جبرين ( 55 )

تاثرات بھیجیں