اتوار 8 ربیع الثانی 1440 - 16 دسمبر 2018
اردو

سمندر ميں گمشدہ شخص كى نماز جنازہ

2313

تاریخ اشاعت : 03-04-2006

مشاہدات : 2773

سوال

كيا سمندر ميں گمشدہ شخص پر قاضى كا اسے مردہ قرار دينے كے بعد نماز جنازہ ادا كى جائےگى ؟

جواب کا متن

الحمد للہ :

ہم نے يہ سوال فضيلۃ الشيخ محمد بن صالح عثيمين رحمہ اللہ تعالى كے سامنے پيش كيا تو ان كا جواب مندرجہ ذيل تھا:

سب تعريفات اللہ رب العالمين كے ليے ہيں، اور اللہ تعالى ہمارے نبى محمد صلى اللہ عليہ وسلم اور ان كى آل اور ان كے صحابہ كرام پر اپنى رحمتيں نازل فرمائے:

جى ہاں جب قاضى نے اس پر موت كا حكم لگا ديا ہے تو اس كى نماز جنازہ ادا كى جائےگى، كيونكہ ہمارے ليے ظاہر كے علاوہ كچھ نہيں، تو جس طرح جب قاضى اس كى موت كا حكم صادر كر دے تو اس كا مال بطور وراثت تقسيم ہو گا، اور اس كى بيوى عدت گزار كر شادى كے ليے حلال ہو گى، اور اسى طرح اس كى نماز جنازہ بھى ...

ماخذ: الشيخ محمد بن صالح العثيمين

تاثرات بھیجیں