اتوار 15 جمادی اولی 1440 - 20 جنوری 2019
اردو

گولياں كھانے كے بعد ماہوارى ميں خلل پيدا ہونا

25784

تاریخ اشاعت : 05-04-2009

مشاہدات : 4662

سوال

ايك عورت نے مانع حمل گولياں اور انجيكشن استعمال كيے جس كى بنا پر ماہوارى ميں بے قاعدگى اور خلل پيدا ہو گيا، چنانچہ اسے دس يوم جو كہ اس كى ماہوارى ہے خون آتا ہے، اور پھر دس يوم تك نہيں، ليكن دس دن كے بعد دوبارہ خون آ جاتا ہے اس كا شرعى حكم كيا ہو گا ؟

جواب کا متن

الحمد للہ:

اگر عورت كى ماہوارى ميں عادت سے ہٹ كر خلل پيدا ہو جائے تو وہ امتياز پر عمل كرےگى، اس ليے جب حيض كا خون جو كہ سياہ اور اس كى بو معروف ہوتى ہے ديكھے تو نماز روزہ ترك كر دے حتى كہ خون بند ہو جائے.

الشيخ عبد الكريم الخضير.

يہ اس وقت ہے جب مہينہ ميں ماہوارى كے مكمل ايام پندرہ يوم سے زيادہ نہ ہوں.

ماخذ: الشيخ محمد صالح المنجد

تاثرات بھیجیں