اتوار 19 ذو القعدہ 1440 - 21 جولائی 2019
اردو

حج بدل کی اجرت لینا

26978

تاریخ اشاعت : 07-01-2004

مشاہدات : 3958

سوال

میرا خاوند فوت ہوچکا ہے اللہ تعالی اس پر رحم کرے ، ان شاء اللہ میرا اردہ ہے کہ اس سال میں کسی شخص کو اس کی طرف سے حج کراؤں ، توکیا تواس کی طرف سے حج بدل کرے گا اس کے لیے کھانے پینے اورگاڑی اورخیموں کے کرایہ کے علاوہ اپنی محنت کے بدلے میں بھی پیسے لینے جائز ہیں کہ نہیں ؟

جواب کا متن

الحمد للہ
کسی کی طرف سے حج بدل کرنے کے لیے مقرر کردہ اجرت لینا جائز ہے چاہے وہ رقم حج میں کھانے پینے اوردوسرے خرچہ وغیرہ سے زيادہ ہی کیوں نہ ہو ، اوراس کے لیے مشروع یہ ہے کہ واس حج میں خیر وبھلائی کے ارادہ سے شامل ہو اورحج میں اس کے لیے جو کچھ میسر ہوسکے حرم میں عبادات بجالائے ، اس کا مقصد اورارادہ صرف مال کا حصول ہی نہیں ہونا چاہیے ۔

اللہ تعالی ہی توفیق بخشنے والا ہے ۔ .

ماخذ: اللجنۃ الدائمہ للبحوث العلمیۃ والافتاء ( 11 / 60 ) ۔

تاثرات بھیجیں