بدھ 15 جمادی ثانیہ 1440 - 20 فروری 2019
اردو

نماز ميں وسوسے كى شكار عورت كے ليے نماز تراويح ميں عورتوں كى امامت كروانى جائز ہے

سوال

كيا نماز ميں وسوسے كى شكار عورت كے ليے نماز تراويح ميں اپنى بہنوں كى امام كروانى جائز ہے ؟

جواب کا متن

الحمد للہ:

اس عورت كے ليے نماز تراويح ميں اپنى بہنوں كى امامت كروانے ميں كوئى حرج نہيں، جب وہ نماز كى شروط اور اس كے اركان اور واجبات كو پورا كرتى ہو تو وہ عورتوں كى جماعت كروا سكتى ہے، اور ہو سكتا ہے اس كا امامت كروانا اس كے ليے اپنے آپ پر قابو پانے ميں ممد و معاون ہو، اور وسوسے كو قبول نہ كرنے كا سبب بن جائے.

ممكن ہے كہ يہ وسوسے ختم ہو كر رہ جائيں، اور اس كا باجماعت نماز ادا كرنا نماز ميں ضبط كى زيادتى كا باعث بن جائے.

واللہ اعلم .

ماخذ: الاسلام سوال و جواب

تاثرات بھیجیں