بدھ 14 رجب 1440 - 20 مارچ 2019
اردو

كوئى چيز بنانے كا معاہدہ كرنا

2146

تاریخ اشاعت : 26-01-2013

مشاہدات : 1701

سوال

كسى چيز كے بنانے كا معاہدہ كيا ہے؟ اور اس كا كيا حكم ہے؟ اور اس كى شروط كيا ہيں ؟

جواب کا متن

الحمد للہ:

اول:

كسى چيز كو بنانے كا معاہدہ - جو كہ كام اور بعينہ چيز كے ذمہ پر لاگو ہوتا ہے- جب اس ميں معاہدہ كے اركان اور شروط پائى جائيں تو طرفين كو لازم ہوتا ہے.

دوم:

كسى چيز كو تيار كرنے كے معاہدہ ميں مندرجہ ذيل شروط كا ہونا ضرورى ہے:

ا - بنائى جانے والى چيز كى جنس اور اس كى قسم اور مقدار اور اس كے مطلوبہ اوصاف بيان ہوں.

ب - اس ميں مدت كى تحديد كى گئى ہو.

سوم:

كسى چيز كى تيارى كے معاہدہ ميں مكمل رقم ادھار كرنى جائز ہے، يا پھر مدت محدودہ ميں قسطوں ميں ادائيگى كى جاسكتى ہے.

چہارم:

كسى چيز كى تيارى كے معاہدہ ميں بطور سزا كوئى شرط ركھنى جائز ہے جس پر طرفين متفق ہوں جب تك اس ميں كوئى سخت حالات نہ پيش آجائيں.

واللہ تعالى اعلم.

ماخذ: ديكھيں: مجمع الفقہ الاسلامى صفحہ نمبر ( 144 )

تاثرات بھیجیں